ابھی تو پردہ سرکا ہے ۔ اوریا مقبول جان

معیاری

 

One response »

  1. بلاشبہ درست فرمایا ہے اوریا صاحب، جب دعائیں ایک تقریب بن کر رہ جائيں، اور گھناؤنے کردار کے لوگ، جو شراب پی کر ٹی وی پر آ کر لوگوں کے سامنے محض ناٹک کرنے کے لیے آئیں، جب لوگ انہی ہاتھوں سے راتوں کو آگ لگائيں اور پھر اگلے دن ٹی وی کیمروں کی چکا چوند روشنیوں میں انہی لوگوں کی، جنہیں پچلی ہی رات قتل کر کے آئے ہوں، فاتحہ خوانی کر رہے ہوں تو اس سے بڑھ کر منافقت کی کیا مثال دی جائے؟ وہی ہاتھ رات کی تارکی میں لوگوں کے گلے کاٹتے ہیں ، اور وہی ہاتھ، دن کے اجالے میں ،ٹی وی کیمروں کی چکاچوند روشنیوں میں، انہی قاتل ہاتھوں میں موم بتیاں اٹھائے آتے ہیں، شرم کا مقام ہے اور ڈوب مرنے کا مقام ہے۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s